’’اردو حمدونعت پر فارسی شعری روایت کا اثر‘‘ تذکرہ نگار…پروفیسر ڈاکٹر عاصی کرنالی

’’اردو حمدونعت پر فارسی شعری روایت کا اثر‘‘
تذکرہ نگار…پروفیسر ڈاکٹر عاصی کرنالی

ڈاکٹر عاصی کرنالی معروف نعت گو،ادیب و محقق اور ماہر تعلیم کی حیثیت سے جانے اور پہچانے جاتے ہیں۔آپ کا تحقیقی مقالہ (پی ایچ ڈی)’’اردوحمدونعت پر فارسی شعری روایت کا اثر‘‘پانچ ابواب پر مشتمل ہے۔
عربی حمد کے حوالے سے ۲۷ شعرا ء کا نمونۂ کلام اور مختصر تعارف شامل ہے،عربی نعت کے ۳۲ شعراء کرام کے کلام کے نمونے پیش کیے گئے ہیں۔حمدونعت کے فارسی شعراء کی تعداد ۹۰ ہے،جنوبی ہند کے۶۹ شعرائے حمدونعت کو شامل کیا گیا ہے۔
جنوبی ہند کے ۱۳،صوفیہ کرام شعرا کا نمونۂ کلام اور تذکرہ مقالے میں شامل ہے۔ میرتقی میرؔ سے سوداؔ و امیر مینائیؔ و محسنؔ کاکوروی تک(حمدونعت کا سفر)۲۴ قدیم شعراء کا کلام و تذکرہ موجود ہے۔’’عصر جدید‘‘(۱۸۵۷ء سے تشکیل پاکستان تک)حمدونعت کے حوالے سے حالیؔ سے بیدمؔ وارثی تک ۱۶ شعراء کرام کے کلام و حالات پیش کیے گئے ہیں۔عصر حاضر (۱۹۴۷ء تا حال)اردو حمدونعت کا جائزہ لیتے ہوئے ڈاکٹر عاصی کرنالی نے مولانا ضیاءؔ القادری سے دردؔ کاکوروی تک ۷۳ شعراء کا نمونۂ کلام اور مختصر تعارف شامل کیا گیا ہے۔ خواتین ہر شعبہ میں مردوں کے شانہ بشانہ کام کر رہی ہیںچنانچہ شاعری میں بھی وہ کسی سے پیچھے نہیں۔ڈاکٹر صاحب نے اردو شاعرات کی حمدویہ و نعتیہ شاعری کا بھی جائزہ لیا ہے اور ان کے حالات زندگی کے بارے میں بھی معلومات فراہم کی ہیں۔شاعرات کی تعداد ۷۳ ہے۔ مسلم شعراء کے علاوہ غیر مسلم شعراء نے بھی حمدونعت کہی ہیں۔
ڈاکٹر صاحب نے نعت کے حوالے سے ۳۳ شعراء کے حالات زندگی و نعتیہ شاعری کا جائزہ لیا ہے۔اردوحمد کے حوالے سے دس غیر مسلم شعراء کا ذکر کیا ہے
گویا کہ مقالے میں ۳۹۳ شعراء و شاعرات کا تذکرہ موجود ہے۔
ڈاکٹر عاصی کرنالی نے بڑی جانفشانی،انتہائی سلیقے اور قرینے سے مقالہ کو چار چاند لگائے ،اُن کا طرز تحریر دلکش و دلنشیں ہے۔زیر نظر مقالہ یوں بھی اہمیت کا حامل ہے کہ اس سے پہلے اردو میں پی ایچ ڈی کے دو مقالے شائع ہوئے ہیں جن میں صرف نعت پر گفتگو کی گئی ہے جبکہ مذکورہ مقالے میں حمدونعت پر یکساں گفتگو کی گئی ہے جو ہماری نظر میں جامع اور انتہائی وقیع ہے۔ڈاکٹرعاصی کرنالی صاحب نے تحقیق کا حق بحسن و خوبی ادا کیا ہے۔
ڈاکٹر صاحب نہ صرف یہ کہ ہماری جانب سے بلکہ پوری دنیائے حمدونعت کی جانب سے مبارک باد کے مستحق ہیں۔
مذکورہ مقالہ’’اردو حمدونعت پر فارسی شعری روایت کا اثر‘‘جون ۲۰۰۱ء میں شائع ہوا اسے ’’اقلیم نعت‘‘کراچی نے’’بزم ہنر‘‘کراچی کے تعاون سے شائع کیا۔
٭٭٭٭٭