جمال روضہ سرکارؐ سے محروم ہوں یارب ابھی تک دیدۂ بیدار سے محروم ہوں یارب

منیرقصوری

جمال روضہ سرکارؐ سے محروم ہوں یارب
ابھی تک دیدۂ بیدار سے محروم ہوں یارب

مرے الفاظ مدحت کی پذیرائی نہیں ممکن
کہ میں تو قوتِ گفتار سے محروم ہوں یارب

عطا کر سوز و ساز رومی و آہنگِ خاقانی
کہ میں اس دولت بیدار سے محروم ہوں یارب

کہیں طیبہ میں کنج عافیت مجھ کو بھی مل جائے
مدینہ کے در و دیوار سے محروم ہوں یارب