خالقِ عرشِ بریں فرش زمیں اللہ ہے کائنات کل کا مالک بالیقیں اللہ ہے

فرقانؔ ادریسی (کراچی)

خالقِ عرشِ بریں فرش زمیں اللہ ہے
کائنات کل کا مالک بالیقیں اللہ ہے

شوق سے پڑھتا ہے جو شام و سحر ام الکتاب
اس کو جنت میں کیا کرتا مکیں اللہ ہے

نارِ دوزخ کی ہوا بھی اس کو لگ سکتی نہیں
جس کسی کے دل کے اندر دل نشیں اللہ ہے

ظاہر و باطن کی ہر ذی روح کو بہر حیات
بخشتا اشیائے خوردن کیا نہیں اللہ ہے

بزم رنگ و بو میں کر دیتا جسے بھی چاہتا
رشکِ دل آویز و جاں افزا حسیں اللہ ہے

اس میں شک کی کوئی بھی فرقانؔ گنجائش نہیں
روزِ اول سے ہی رب العالمیں اللہ ہے