سرتاجن کے تاج معین الدین ۔منقبت

تم ہی ایک ہو مورے سجن ،
بپتا سنو موری آج معین الدین،سرتاجن کے تاج معین الدین
تم ہو جگت مہراج معین الدین

میں بری ہوں بھلی ہوں تھاری ہوں
مورے خواجہ مو پے دیا کرو
تم ہو جگت مہراج معین الدین

توری ایک نظریہ سے تر جاؤں گی
بن دیکھے تحارے میں تو مر جاؤں گی
تم ہو جگت مہراج معین الدین

تمرے دوارے آن پڑھی ہوں
راکھیو راکھیو لاج معین الدین

صدقہ پیر ہارونی کا ،
بھاگ جگا دو آج معین الدین،

تم ہی ایک ہو مورے سجن ،
بپتا سنو موری آج معین الدین،

تم ہی بتاؤ اب کت جاؤں ،
میں دکھیا محتاج معین الدین،

رکھ لی جیو حسنین کا صدقہ
اپنے نصیر کی لاج معین الدین

پیر سید نصیر الدین نصیر گیلانی رحمتہ اللہ علیہ​