صانع باکمال توسب سے عظیم تیرافن

صانع باکمال توسب سے عظیم
تیرافن
رنگ شجرشجرتیرا،روپ ترا چمن
چمن
کن کا ثبوتِ لاجوب سار ے
نجوم وماہتاب
مہر ترے حضورخم،سجدے میں ہے
کرن کرن
عرش سے تا بساطِ  ارض بارش نور ہے تری
نکہتیںتیری بے مثال ،خوب ہے
تیرابانکپن
مشک ختن میں تیری بو،درِعدن
کی آب تو
تیرے ہی نکہت وجمال
،جوہی،گلاب،نسترن
بلبلیں اورقمریاںسازِ احد
پہ نغمہ خواں
دیکھوجسے دمِ سحر تیری صفات
میں مگن
سازورباب وچنگ میں ،زیست کے
ہرامنگ میں
قوس قزح کے رنگ میں
تیراجمال ضوفگن
د
ہے قادر آگ کو  گلفشانی بخش دیتاہے
لگے جب ضرب ایڑی کی توپانی
بخش دیتاہے
بہاریںرقص فرماتی ہیں
اورگلزار کھلتے ہیں
وہ صحرا کوبہارِ جادوانی
بخش دیتاہے
ثنائے شاہ پرآمادہ
ہوتاہوںتو رب میرا
تفکر اور خامے کوروانی بخش
دیتاہے
خود اپنے ہی کہے پر رشک
کرتاہے سخنوربھی
زباںکویوں بھی وہ جادو
بیانی بخش دیتاہے
ارادے سے نبی کی جان لینے
آنے والے کو
محبت کی ادا،رہ مہربانی بخش
دیتایے
حبیب ر ب کو اے ابرار ؔ جب
میںیادکرتاہوں
وہ آنکھوں کوگہرہائے فشانی
بخش دیتاہے
 
ابرارؔکرتپوری