مالک بھی تو مختار بھی تو ہے مرا

حبیب احسنؔ (کراچی)

مالک بھی تو
مختار بھی
تو ہے مرا
خلاق بھی، رزاق بھی
ارض و فلک ،ماہ و نجوم
تیرے نشاں
اور سب کے سب
تیری ثنا کے ترجماں
کیوں کرکہیں
ہم سب تجھے
راز نہاں
تیراکرم اور
بارش رحمت رہے
یونہی سدا
میرے خدا!