پروردگارِ عالم اعلیٰ مقام تیرا تو رب ہے دوجہاں کا سارا نظام تیرا

حبیب راحب حباب

پروردگارِ عالم اعلیٰ مقام تیرا
تو رب ہے دوجہاں کا سارا نظام تیرا

ہر شئے پہ توہی قادر ہرجا ہے توہی حاضر
ہردل میں یاد تیری ہر لب پہ نام تیرا

پھل پھول کیا شجر کیا، حیوان کیا بشر کیا؟
ذروں سے آسماں تک ہے فیض عام تیرا

یہ چاند یہ ستارے، ندیاں پہاڑ سارے
ہر شیٔ میں توہی تو ہے جلوہ ہے عام تیرا

اک کن سے تیری داتا کل کائنات بدلے
کیا کوئی وصف لکھے مجھ سا غلام تیرا

بندے کو تونے اپنے کچھ اس طرح نوازا
آیا ہے فرش پر بھی اکثر سلام تیرا

لب پر یہی دعا ہے یارب طفیل احمد
لکھے حبابؔ جو کچھ ہو سب کلام تیرا