’’ڈاکٹر آفتاب احمد نقوی شہید اوراوج کا نعت نمبر‘‘

’’ڈاکٹر آفتاب احمد نقوی شہید اوراوج کا نعت نمبر‘‘

پروفیسر ڈاکٹرا ٓفتاب احمدنقوی شہید نے علمی و ادبی مجلّہ ’’اوج‘‘ کا نعت نمبر پروفیسر میاں مقبول احمد کی سرپرستی میں گورمنٹ کالج شاہدرہ ، لاہور سے ۱۹۹۳ء ۱۹۹۲ء میں شائع کیا۔ دو جلدوں پر مشتمل اوج کا نعت نمبراپنی مثال آپ ہے۔ حمدیہ کلام ، نعتیہ کلام ، مقالات و مضامین وغیرہ مختلف عنوانات کے تحت صفحۂ قرطاس پر اپنی جلوہ سامانیاں بکھیر رہے ہیں۔
مثلاً … نعت گوئی … سنّتِ رحمن … نعت … فکر و فن …نعت… چیست
نگر نگر میں نعت …پنجاب میں نعت … پنجابی نعت (انتخاب)
اس کے علاوہ نعت گو شعراء سے … قلمی مذاکرہ شامل ہے۔
مذاکرے میں کم و بیش ۱۴۰ شعراء کی شرکت سے شہید آفتاب نقوی کے خلوص و عقیدت اور اُن کی محنت و عظمت کا اندازہ کیا جاسکتا ہے۔ قلمی مذاکرے کے علاوہ ۱۴۰ شعرائے کرام کا مختصر تعارف بھی پیش کیا گیا ہے۔ یہ ایک غیر معمولی کام ہے۔ جسے شہید آفتاب نقوی نے بڑی ہی جانفشانی سے انجام دیا ہے۔ جس طرح ماہنامہ’’ شام و سحر‘‘ کا نعت نمبر تاریخ کا سنہری گوشہ ہے۔ اسی طرح اوج کا نعت نمبر نعتیہ ادب کا یادگار حصہ ہے۔
پروفیسر ڈاکٹر آفتاب احمد نقوی شہید دنیا میں نہیں لیکن اُن کام و نام ہمیشہ ہمیشہ زندہ و تابندہ رہے گا۔ وہ ہر دلعزیز شخصیت تھے۔
۱۹۹۶ء کو کراچی تشریف لائے تو راقم کو ’’اوج‘‘ کا نعت نمبر پیش کیا جو میری لائبریری میں محفوظ ہے شہید کی یاد دلاتا رہے گا۔میری جانب سے شہید کے درجات کی بلندی کے لیے پُر خلوص دعائیں ہمیشہ جاری رہیں گی۔
٭٭٭٭٭