یارب نبیؐ کے باغ کی قربت نصیب ہو مجھ کومیری حیات میں جنت نصیب ہو

ڈاکٹرقمررئیس بہرائچی

یارب نبیؐ کے باغ کی قربت نصیب ہو
مجھ کومیری حیات میں جنت نصیب ہو
نارسقر سے مجھ کو برأت نصیب ہو
سرکارِ دو جہاں کی محبت نصیب ہو
میدانِ حشر میں جو مرے کام آسکے
محبوبِ دو جہاں کی وہ چاہت نصیب ہو
غم ہائے روزگار سے تنگ آچکا ہوں میں
شہرنبیؐ میں مجھ کو سکونت نصیب ہو
میں بھی شفیعؐ حشر کا ادنیٰ غلام ہوں
محشر کے روز مجھ کو شفاعت نصیب ہو
کچھ تو تمیز اچھے برے کی میں کرسکوں
روشن دماغ، چشم بصیرت نصیب ہو
جو سرزمینِ طیبہ پہ پہنچا سکے ہمیں
یارب ہمیں وہ قوت و ہمت نصیب ہو
بس اتنی التجا ہے مری تجھ سے اے خدا
دیدارِ مصطفیؐ کی اجازت نصیب ہو
کوئی قمرؔ رئیس کو کاذب نہ کہہ سکے
بوبکرؓ کی اسے بھی صداقت نصیب ہو